جناب ظہیر باقر بلوچ کی ایک غزل

وہ جو کہتے تھے تری سوچ کے دھارے چپ ہیںاب میں بولا ہوں تو کیوں سارے کے سارے چپ ہیں شور کرتے ہیں وہ کیوں کچھ نہیں معلوم جنہیںجاننے والے تو آگاہی کے مارے چپ ہیں کیسے غاٸب ہوٸی خوابوں کی مِسَل کون بتاٸےمحکمے سر بگریباں ہیں ادارے چپ ہیں اک زیاں میرا نہیں سب… Continue reading جناب ظہیر باقر بلوچ کی ایک غزل

Published
Categorized as غزل
Translate »